پیغام محبت کی زباں ہے اردو : احمد علی برقی اعظمی


پیغام محبت کی زباں ہے اردو
ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی
پیغامِ محبت کی زباں ہے اردو
کِردار کی عظمت کا نشاں ہے اردو
شیرینئ گفتار کا سرچشمہ ہے
سرسبز و معطر ہے جہاں ہے اردو
پڑھنا ہے اگر غالبؔ و مومنؔ کو پڑھیں
معیارِ زباں ، حُسنِ بیاں ہے اردو
ہے داغؔ کی شیرینئ گفتار یہاں
تہذیب کی اک جوئے رواں ہے اردو
ہے میر تقی میرؔ کا اعجازِ سخن
جس زندہ زباں میں ، وہ زباں ہے اردو
ہے فرض یہ اربابِ نظر کا دیکھیں
پہلے تھی کہاں آج کہاں ہے اردو
تابندہ تھا ، ہے، اور رہے گا برقیؔ 
اک گنجِ نہاں اور عیاں ہے اردو




Barqi Azmi With Renouned Qawwal Of The Modern Times Aslam Sabri In The Studio Of All India Radio New Delhi .


سوشل میڈیا پر اردو کی تحریم و تقدیس کی آواز ادبی جریدہ ۔ تقدیس کی برقی نوازی: بشکریہ محبی سید ایاز مفتی



جموں و کشمیر اردو گِلڈ کی جانب سے برقی اعظمی کے شعری مجموعے کی رونمائی اور تفویض فخر اردو ایوارڈ بدست ادب و ادیب نواز ممتاز ادیب و نقاد امین بنجارا





منظوم اظہار امتنان و تشکربہ جموں و کشمیر اردو گِلڈ
احمد علی برقی اعظمی
میں ہوں اردو گلڈ کے اس لطف کا منت گذار
جس نے بخشا ہے مری روحِ سخن کو اعتبار
فیس بُک بھی مستحق اس کے لئے ہے داد کی
تازہ کرتی ہے جو یادیں زندگی کی خوشگوار
گرچہ ہوں میں مکتبِ شعر و سخن میں مبتدی
’’ فخر اردو ‘‘ کا ہے یہ اعزاز وجہہِ افتخار


Ahmad Ali Barqi Azmi in Amaravati Poetic Prizm 2017 At Vijayawada Recit...

شاعرِ خوش فکر و خوش گفتار برقی اعظمی تحریر : جناب عارف حسن کاظمی


سفیر امن و سکوں بن کے آئے عید الفطر احمد علی برقی اعظمی بشکریہ : اردو نیٹ جاپان

Eid Mubarak To All Who Are Celebrating Eid in Various Parts Of The World


مبارک ان کو ہوں سب زندگی کے عیش و نشاط
منارہے ہیں جو فضلِ خدا سے عید الفطر
احمد علی برقی اعظمی

Barqi Azmi Recites A Topical poem On Delhi in IIC Lodhi Road New Delhi

Compliments of Prof. Afaq Ahmad & Barqi Azmi On Jashn e Muslim Saleem

Barqi Azmi Recites A Topical Poem On Eid Mubarak For 157th Mushaira Idar...

عید کی لے کر بشارت آج آئی چاند رات : احمد علی برقی اعظمی


عید کی لے کر بشارت آج آئی چاند رات
احمد علی برقیؔ اعظمی
لے کے آئی ہے پیامِ رونمائی چاند رات
شکر ہے اللہ کاجس نے دکھائی چاند رات
عید کی لے کربشارت آج آئی چاند رات
بھیجتا ہے تہنیت بھائی کو بھائی چاند رات
چاند کی دے کر مبارکباد ٹیلیفون سے
رسمِ اُلفت یار نے اپنی نبھائی چاند رات
سننے کو شیریں بیانی جس کا دل مُشتاق تھا
مِثلِ بلبل اس نے کی نغمہ سرائی چاند رات
رونما ہو کر بشکلِ ماہِ تاباں بام پر
بھول بیٹھا بے وفا بھی بے وفائی چاندرات
مِثل غنچہ کِھل اُٹھا گلزار میں وہ گُلعذار
اِس طرح کی اس نے آکر رونمائی چاند رات
اہلِ ایماں کے لئے قدرت کا یہ انعام ہے
تیس روزوں کی ہے اے برقیؔ کمائی چاند رات



میرے ہونے کی علامت میری یہ تصویر ہے : ڈاکٹر احمد علی برقی اعظمی ، نئی دہلی


میں جہانِ آب و گِل میں تھا یہ ہے اس کا ثبوت
میرے ہونے کی علامت میری یہ تصویر ہے
احمد علی برقی اعظمی

MaiN jahan e aab o gil meiN tha yeh hai is ka suboot
Mere hone ki elamat meri yeh tasveer hai
Ahmad Ali Barqi Azmi

                                               

ادارہ عالمی بیسٹ اردو پوئیٹری کی جانب سے تمام احباب کو عید کی مبارکباد پیش کی جاتی ہے : پیش کرتی ہے مبارکباد سب احباب کو ایک ادبی کہکشاں ہے بیسٹ اردو پوئیٹری

https://egohater.wordpress.com/2018/06/13/%D8%B3%D8%A8-%DA%A9%D9%88-%D8%B9%DB%8C%D8%AF-%D9%85%D8%A8%D8%A7%D8%B1%DA%A9-%D9%BE%DB%8C%D8%B4-%DA%A9%D8%B1%D8%AA%DB%92-%DB%81%DB%8C%DA%BA-%D8%A7%D8%AF%D8%A7%D8%B1%DB%81%D8%8C-%D8%B9%D8%A7%D9%84%D9%85/



          پیش کرتی ہے مبارکباد سب احباب کو
ایک ادبی کہکشاں ہے بیسٹ اردو پوئیٹری
منفرد یہ بزم ہے ترویج اردو کے لئے
ناشرِ اردو زباں ہے بیسٹ اردو پوئیٹری
احمد علی برقی اعظمیٓ


سفیر امن و سکوں بن کے آئے عیدالفطر: احمد علی برقی اعظمی


سفیر امن و سکوں بن کے آئے عیدالفطر
احمد علی برقیؔ اعظمی
سفیر امن و سکوں بن کے آئے عید الفطر
دلوں سے سب کے کدورت مٹائے عید الفطر
نقوشِ بُغض و حسد کو مِٹائے عیدالفطر
دلوں میں شمعِ محبت جَلائے عید الفطر
جوغمزدہ ہیں اُنھیں آکے شادکام کرے
جو رورہے ہیں انگیں بھی ہنسائے عید الفطر
بڑھائے حوصلہ پژمُردہ دل ہیں جو اُن کا
جو گِر رہے ہیں اُنھیں بھی اُٹھائے عیدالفطر
یہ اُستوار کرے رشتۂ محبت کو
ہے جو بھی عہدِ وفا وہ نِبھائے عیدالفطر
دیار غیر میں ہیں جو ، رہیں خوش و خُرم
وطن کی یاد کو دل سے بُھلائے عیدالفطر
ہوں ہمکنار خوشی سے سبھی امیر و غریب
ہمیں بھی اور اُنھیں، راس آئے عید الفطر
خزاں کی زد میں نہ گُلزارِ زندگی ہو کبھی
چمن میں اپنے نئے گل کِھلائے عید الفطر
یہ سدِ باب کرے تیرگی کا اے برقیؔ 
کبھی نہ شمعِ اخوت بُجھائے عیدالفطر