دھوپ میں نکلو گھٹاؤں میں نہا کر دیکھو : ایک زمین کئی شاعر ندا فاضلی اور احمد علی برقی اعظمی ، بشکریہ ناظم ایک زمین کئی شاعر ، اردو کلاسک اور ایک اور انیک جناب عمر جاوید خان



ایک زمین کئی شاعر
ندا فاضلی اور احمد علی برقی اعظمی
ندا فاضلی
دھوپ میں نکلو گھٹاؤں میں نہا کر دیکھو
زندگی کیا ہے کتابوں کو ہٹا کر دیکھو
صرف آنکھوں سے ہی دنیا نہیں دیکھی جاتی
دل کی دھڑکن کو بھی بینائی بنا کر دیکھو
پتھروں میں بھی زباں ہوتی ہے دل ہوتے ہیں
اپنے گھر کے در و دیوار سجا کر دیکھو
وہ ستارہ ہے چمکنے دو یوں ہی آنکھوں میں
کیا ضروری ہے اسے جسم بنا کر دیکھو
فاصلہ نظروں کا دھوکہ بھی تو ہو سکتا ہے
وہ ملے یا نہ ملے ہاتھ بڑھا کر دیکھو

احمد علی برقی اعظمی
رسمِ اظہار محبت کو نبھا کر دیکھو
دل سے دل چاہنے والوں کے مِلا کر دیکھو
ہم کو آپس میں لڑاکر جو جدا کرتی ہے
بُغض و نفرت کی وہ دیوار گِرا کر دیکھو
کیوں ہو گُم سُم کہو کیا حال ہے کچھ تو بولو
نیچی نظروں کو اِدھر اپنی اُٹھا کر دیکھو
بوجھ جو دل پہ ہے ہو جائے گا اِس سے ہلکا
ہنسو دل کھول کے مجھ کو بھی ہنس کر دیکھو
بدگمانی کا نہیں ہے کہیں دنیا میں علاج
پاس آؤ ہمیں نزدیک سے آکر دیکھو
کیوں اندھیرے میں الگ اور تھلگ بیٹھے ہو
’’ دھوپ میں نکلو گھٹاؤں میں نہا کر دیکھو ‘‘
گرمجوشی سے وہ تم سے بھی مِلے گا آکر
ہاتھ برقی کی طرف اپنے بڑھا کر دیکھو
غزل دیگر
احمد علی برقی اعظمی
خانۂ دل کو جو ویراں ہے بسا کر دیکھو
حال کیسا ہے مرا سامنے آکر دیکھو
تم پہ ہو جائیں گے اسرارِ حقیقت روشن
شمعِ ایمان و یقیں دل میں جلا کر دیکھو
میں بُلانے پہ نہ آؤں تو شکایت کرنا
پہلے تم مجھ کو بصد شوق بُلا کر دیکھو
موم کی طرح پگھل جائے گا پتھر کا جگر
اُس سے اک بار ذرا پیار جتا کر دیکھو
ہے اسے بارِ سماعت جو اسے رہنے دو
حالِ دل اپنا ہے جو اس کو سناکر دیکھو
وہ تمھیں ٹوٹ کے چاہے گا اگر جاگ گیا
خوابِ غفلت میں ہے جو اس کو جگا کر دیکھو
کیوں ہو برقی سے خفا تھوک دو اپنا غصہ
مان بھی جاؤ اسے اپنا بنا کر دیکھو



ہفت رروزہ فیس بُک ٹائمز کے ۴۳ ویں عالمی آنلاین فی البدیہہ طرح مشاعرے بتاریخ ۱۸ جون ۲۰۱۸ کے لئے میری کاوش احمد علی برقی اعظمی





ہفت رروزہ فیس بُک ٹائمز کے ۴۳ ویں عالمی آنلاین فی البدیہہ طرح مشاعرے بتاریخ ۱۸ جون ۲۰۱۸ کے لئے میری کاوش

احمد علی برقی اعظمی
رسمِ اظہار محبت کو نبھا کر دیکھو
دل سے دل چاہنے والوں کے مِلا کر دیکھو
ہم کو آپس میں لڑاکر جو جدا کرتی ہے
بُغض و نفرت کی وہ دیوار گِرا کر دیکھو
کیوں ہو گُم سُم کہو کیا حال ہے کچھ تو بولو
نیچی نظروں کو اِدھر اپنی اُٹھا کر دیکھو
بوجھ جو دل پہ ہے ہو جائے گا اِس سے ہلکا
ہنسو دل کھول کے مجھ کو بھی ہنس کر دیکھو
بدگمانی کا نہیں ہے کہیں دنیا میں علاج
پاس آؤ ہمیں نزدیک سے آکر دیکھو
کیوں اندھیرے میں الگ اور تھلگ بیٹھے ہو
’’ دھوپ میں نکلو گھٹاؤں میں نہا کر دیکھو ‘‘
گرمجوشی سے وہ تم سے بھی مِلے گا آکر
ہاتھ برقی کی طرف اپنے بڑھا کر دیکھو


Ahmad Ali Barqi Azmi Reciting His Ghazals in Delhi Urdu Academy

پیغام محبت کی زباں ہے اردو : احمد علی برقی اعظمی


پیغام محبت کی زباں ہے اردو
ڈاکٹر احمد علی برقیؔ اعظمی
پیغامِ محبت کی زباں ہے اردو
کِردار کی عظمت کا نشاں ہے اردو
شیرینئ گفتار کا سرچشمہ ہے
سرسبز و معطر ہے جہاں ہے اردو
پڑھنا ہے اگر غالبؔ و مومنؔ کو پڑھیں
معیارِ زباں ، حُسنِ بیاں ہے اردو
ہے داغؔ کی شیرینئ گفتار یہاں
تہذیب کی اک جوئے رواں ہے اردو
ہے میر تقی میرؔ کا اعجازِ سخن
جس زندہ زباں میں ، وہ زباں ہے اردو
ہے فرض یہ اربابِ نظر کا دیکھیں
پہلے تھی کہاں آج کہاں ہے اردو
تابندہ تھا ، ہے، اور رہے گا برقیؔ 
اک گنجِ نہاں اور عیاں ہے اردو




Barqi Azmi With Renouned Qawwal Of The Modern Times Aslam Sabri In The Studio Of All India Radio New Delhi .


سوشل میڈیا پر اردو کی تحریم و تقدیس کی آواز ادبی جریدہ ۔ تقدیس کی برقی نوازی: بشکریہ محبی سید ایاز مفتی



جموں و کشمیر اردو گِلڈ کی جانب سے برقی اعظمی کے شعری مجموعے کی رونمائی اور تفویض فخر اردو ایوارڈ بدست ادب و ادیب نواز ممتاز ادیب و نقاد امین بنجارا





منظوم اظہار امتنان و تشکربہ جموں و کشمیر اردو گِلڈ
احمد علی برقی اعظمی
میں ہوں اردو گلڈ کے اس لطف کا منت گذار
جس نے بخشا ہے مری روحِ سخن کو اعتبار
فیس بُک بھی مستحق اس کے لئے ہے داد کی
تازہ کرتی ہے جو یادیں زندگی کی خوشگوار
گرچہ ہوں میں مکتبِ شعر و سخن میں مبتدی
’’ فخر اردو ‘‘ کا ہے یہ اعزاز وجہہِ افتخار


Ahmad Ali Barqi Azmi in Amaravati Poetic Prizm 2017 At Vijayawada Recit...

شاعرِ خوش فکر و خوش گفتار برقی اعظمی تحریر : جناب عارف حسن کاظمی


سفیر امن و سکوں بن کے آئے عید الفطر احمد علی برقی اعظمی بشکریہ : اردو نیٹ جاپان

Eid Mubarak To All Who Are Celebrating Eid in Various Parts Of The World


مبارک ان کو ہوں سب زندگی کے عیش و نشاط
منارہے ہیں جو فضلِ خدا سے عید الفطر
احمد علی برقی اعظمی

Barqi Azmi Recites A Topical poem On Delhi in IIC Lodhi Road New Delhi

Compliments of Prof. Afaq Ahmad & Barqi Azmi On Jashn e Muslim Saleem

Barqi Azmi Recites A Topical Poem On Eid Mubarak For 157th Mushaira Idar...

عید کی لے کر بشارت آج آئی چاند رات : احمد علی برقی اعظمی


عید کی لے کر بشارت آج آئی چاند رات
احمد علی برقیؔ اعظمی
لے کے آئی ہے پیامِ رونمائی چاند رات
شکر ہے اللہ کاجس نے دکھائی چاند رات
عید کی لے کربشارت آج آئی چاند رات
بھیجتا ہے تہنیت بھائی کو بھائی چاند رات
چاند کی دے کر مبارکباد ٹیلیفون سے
رسمِ اُلفت یار نے اپنی نبھائی چاند رات
سننے کو شیریں بیانی جس کا دل مُشتاق تھا
مِثلِ بلبل اس نے کی نغمہ سرائی چاند رات
رونما ہو کر بشکلِ ماہِ تاباں بام پر
بھول بیٹھا بے وفا بھی بے وفائی چاندرات
مِثل غنچہ کِھل اُٹھا گلزار میں وہ گُلعذار
اِس طرح کی اس نے آکر رونمائی چاند رات
اہلِ ایماں کے لئے قدرت کا یہ انعام ہے
تیس روزوں کی ہے اے برقیؔ کمائی چاند رات